9

کشمیر کونسل میں اربوں کی کرپشن

میرپور(ظفر مغل سے)آزاد کشمیر کی تاریخ میں سب سے بڑی میگا کرپشن کا انکشاف،کشمیر کونسل میں تعینات پاکستانی بیورو کریٹس نے وفاق میں موجود کرپٹ مافیا کی ملی بھگت اور آشیرباد سے محکمہ ان لینڈ ریونیو، پراونشل ٹیکسز کے ذریعے مختلف ہائیڈرو پاور پراجیکٹس،سیگریٹ سازی، پولی تھین اور فوم تیار کرنے والی ملکی وغیر ملکی کمپنیوں سے ساز باز کر کے ماضی میں 50ارب سے زائد کی کرپشن کی عجب وغضب کہانی رقم کرتے ہوئے انکم ٹیکس،سیلز ٹیکس اور ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں قومی خزانے کو اربوں کا ٹیکہ لگا دیا اس میگا کرپشن پرچیئرمین کشمیر کونسل (وزیراعظم پاکستان) وزیر امور کشمیر، صدر ووزیراعظم آزاد کشمیر،چیئرمین احتساب بیورو آزاد کشمیر اور تمام متعلقہ ادارے اور شخصیات بھی خاموش تماشائی بن کر رہ گئے ہیں احتساب بیورو آزاد کشمیر بھی چھوٹے ملازمین کی پکڑ دھکڑ اور ڈرا دھمکا کر معاملات چلانے میں’’ڈنگ ٹپاو‘‘پالیسی پر گامزن،میگا کرپشن کے بڑے مگرمچھوں کا کیس کئی سالوں سے زیر التوا ء ڈال کراس میں ملوث مافیا کو میگا کرپشن کی بہتی گنگا میں خوب اشنان کرنے کی تاحال کھلی چھٹی،آزاد کشمیر میں 13ویں آئینی ترمیم کے بعد کشمیر کونسل کے اختیارات آزاد کشمیر حکومت کو منتقل ہونے پر وزیر اعظم آزاد کشمیرراجہ فاروق حیدرکی طرف سے کشمیر کونسل میں تاریخ کی میگا کرپشن کا نوٹس لینے کے بعد ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنرل پر مشتمل اعلیٰ سطحی کمیٹی قائم کرتے ہوئے 15دن میں رپورٹ پیش کرنے کا محکمہ سروسز اینڈ جنرل ایڈمنسٹریشن نے نوٹیفکیشن جاری کر دیا ۔تفصیلات کے ،مطابق آزاد کشمیر کی تاریخ میں سب سے بڑی میگا کرپشن کا انکشاف،کشمیر کونسل میں تعینات پاکستانی بیورو کریٹس نے وفاق میں موجود کرپٹ مافیا کی ملی بھگت اور آشیرباد سے محکمہ ان لینڈ ریونیو پراونشل ٹیکسز آزاد کشمیر کے ذریعے مختلف ہائیڈرو پاور پراجیکٹس،سیگریٹ سازی، پولی تھین اور فوم تیار کرنے والی ملکی وغیر ملکی کمپنیوں سے ساز باز کر کے ماضی میں 50ارب سے زائد کی کرپشن کی عجب وغضب کہانی رقم کرتے ہوئے انکم ٹیکس،سیلز ٹیکس اور ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں قومی خزانے کو اربوں کا ٹیکہ لگا دیا اس میگا کرپشن پرچیئرمین کشمیر کونسل (وزیراعظم پاکستان) وزیر امور کشمیر، صدر ووزیراعظم آزاد کشمیر،چیئرمین احتساب بیورو آزاد کشمیر اور تمام متعلقہ ادارے اور شخصیات بھی خاموش تماشائی بن کر رہ گئے ہیں احتساب بیورو آزاد کشمیر بھی چھوٹے ملازمین کی پکڑ دھکڑ اور ڈرا دھمکا کر معاملات چلانے میں’’ڈنگ ٹپاو‘‘پالیسی پر گامزن،میگا کرپشن کے بڑے مگرمچھوں کا کیس کئی سالوں سے زیر التوا ء ڈال کراس میں ملوث مافیا کو میگا کرپشن کی بہتی گنگا میں خوب اشنان کرنے کی تاحال کھلی چھٹی،آزاد کشمیر میں 13ویں آئینی ترمیم کے بعد کشمیر کونسل کے اختیارات آزاد کشمیر حکومت کو منتقل ہونے پر وزیر اعظم آزاد کشمیرراجہ فاروق حیدرکی طرف سے کشمیر کونسل میں تاریخ کی میگا کرپشن کا نوٹس لینے کے بعد اس پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے متعلقہ اعلیٰ حکام کو ہدایت جاری کیں جس پر آزاد کشمیر کے محکمہ سروسز اینڈ جنرل ایڈ منسٹریشن نے نوٹیفکیشن نمبری Admin/1-1(114)2018کے تحت ایڈیشنل چیف سیکرٹری (جنرل ) کو انکوائری آفیسر مقرر کرتے ہوئے 15دن میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔نوٹیفکیشن کے مطابق انکوائری آفیسرکو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ اشتیاق احمد کمشنر ان لینڈریوینیو ڈیپارٹمنٹ کی 14صفحاتی رپورٹ جس میں 8ارب روپے کی کرپشن کا ذکر کیا گیا ہے کی تحقیقات 2ہفتے میں مکمل کر کے رپورٹ پیش کی جائے ۔یاد رہے کہ آزاد جموں کشمیر کونسل کے تحت محکمہ ان لینڈ ریوینیو ، پراونشل ٹیکسز کے ذریعے مختلف ہائیڈرو پاور پراجیکٹس،سیگریٹ سازی، پولی تھین اور فوم تیار کرنے والی ملکی وغیر ملکی کمپنیوں سے ساز باز کر کے ماضی میں 50ارب سے زائد کی کرپشن کی عجب وغضب کہانی رقم کرتے ہوئے انکم ٹیکس،سیلز ٹیکس اور ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں قومی خزانے کو اربوں کا ٹیکہ لگا نے کی ظفر مغل کی تحقیقاتی رپورٹ 18فروری 2018کو روزنامہ اڑان ، وائس آف جے کے اور بول کشمیر نیوز پر شائع کی گئی تھی۔کشمیر کونسل کی میگا کرپشن کی بہتی گنگا میں سب سے زیادہ آشنان کرنے والے بہاولپور سے تعلق رکھنے والے اگست 2009سے2012تک تعینات رہنے والے ایف بی آر سے مستعارالخدمتی کمشنر ان لینڈ ریوینیو قیصر اقبال نے14صفحاتی رپورٹ کے مطابق مختلف غیر ملکی چائینیز کمپنیوں کو منگلا ڈیم اپ ریزنگ پراجیکٹ ، نیلم جہلم ہائیڈرو پاور پراجیکٹ میں مبینہ طور پر ملی بھگت سے 800کروڑ روپیب کے ریفنڈ دیے جبکہ میرپور میں قائم دو فوم فیکٹریوں کو بھی 500ملین سیلز ٹیکس اور انکم ٹیکس میں مبینہ طور پر چھوٹ دیکر قومی خزانے کو نقصان پہنچایا۔اس رپورٹ کے مطابق مرزا نذیر احمد ڈائیریکٹر ٹیکسیشن (وقت )اور مرزا ذاولفقار کمشنر ان لینڈ ریوینیو (وقت)سمیت عاصم شوکت ڈپٹی کمشنر ان لینڈ ریوینیو (وقت) نے مبینہ طور پر ملی بھگت سے مختلف کمپنیوں کوجنرل سیلز ٹیکس فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی اور ٹیکس چوری کی مد میں مختلف کمپنیوں کو چھوٹ دیتے ہوئے اور ٹیکس مستثنائی سرٹیفکیٹ جاری کرتے ہوئے قومی خزانہ کو اربوں روپے کاٹیکہ لگایا جبکہ سرکاری گاڑیوں کے ناجائز استعمال کی مد میں کروڑوں روپے خرد برد کیے گئے۔آزاد کشمیر کے صنعت کاروں تاجروں اور سول سوسائٹی کے ذمہ داران نے وزیر اعظم آزاد کشمیر کی طرف سے 13ویں آئینی ترمیم کے بعد کشمیر کونسل کے اختیارات آزاد حکومت کو ملنے پر کشمیر کونسل کی میگا کرپشن میں ملوث بڑے مگر مچھوں کو کٹہرے میں لانے کے لیے اعلیٰ سطحی تحقیقات کا خیر مقدم کرتے ہوئے کشمیر کونسل کی میگا کرپشن کا فرانزک آڈٹ کرانے کا مطالبہ کیا ہے ۔ See Less

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں